7 Jan 2021 Ferado

2020 ITUC Global Right Index: India Among 10 Worst Countries for Working People; Check Full List

New Delhi, December 31: According to the ITUC Global Right Index 2020, India lies among the top 10 worst countries in the world for working people. A new entrant, India ranks at fifth position in the seventh edition of the annual index published by the International Trade Union Confederation. Brutal repression of labour unions’ strike, massive dismissals without prior intimation and regression labour laws catapulted India’s entry to the index.

 ICC Hails Kane Williamson as New Zealand Captain Becomes Number One Test Batsman, Netizens Praise Kiwi Star

As per the report, in 2020, the Indian police used disproportionate violence against workers protesting to call for the payment of due wages and better working conditions. Thousands of workers were detained for exercising their right to strike. Labour Laws Changed: Occupational Safety, Health and Working Conditions Code, Industrial Relations Code & Code on Social Security 2020 Passed in Rajya Sabha Today; Know What This Means.

The report also suggests that the current labour condition is going to further worsen with the central government adopting a range of flexible labour market practices that reduce protections for workers in the informal economy. It suggests that these measures weaken and undermine the labour unions and remove the regulatory burden on the business.

 January 2021 Holidays Calendar With Festivals & Events: Lohri, Makar Sankranti, Republic Day, Guru Gobind Singh Jayanti; Know All Important Dates and List of Fasts for the Month

Centre is engaging in practices that prefer worker’s committee over the labour unions and turning a blind eye to employers who engage in anti-union practices including failing to recognise and negotiate with representative trade unions, the ITUC report added. Yogi Adityanath Govt Suspends Major Labour Laws in UP for 3 Years in Attempt to Help Both Existing and New Industrial Units in State.

Talking about unfair treatment of the workers by the police, the report mentions that on 10 October 2019, thousands of contract workers from the Tamil Nadu Generation and Distribution Corporation (TANGEDCO) were arrested in nine regions across the state. Over 10,000 contract workers in TANGEDCO had been protesting for their status to be regularised.

7 Jan 2021 Ferado

وزیرمحنت بغیرپانی گیس کے نادرن بائی پاس پر کس طرح فلیٹس دئےے جارہے ہیں ،انکوائری کرائی جائے

کراچی: سائٹ لیبرفورم کا ایک ہنگامی اجلاس سائٹ کراچی میں منعقد ہوا جسمیں مزدوروں کی بڑی تعداد نے شرکت کی،اجلاس میں ورکرزبورڈ کے رویہ کی شدید مذمت کی گئی اور حال ہی میں قائم نادرن بائی پاس کے فلیٹوں کے حوالے سے بنائی گئی اسکروٹنی کمیٹی کومستردکیاگیا جس میں ورکرزکونظرانداز کرکے ایسے لوگوں کو ورکرز کانمائندہ بناکر پیش کیا گیا جو نہ صرف بورڈ کے افسران کی نوکری کرتے ہیں ان کاکسی بھی ٹریڈیونین سے کوئی تعلق نہیں اور یہ اس لئے کیا گیا تاکہ جو کہ کرپشن کی گئی اسے تحفظ دیاجاسکے۔
اجلاس میں وزیرمحنت سے اپیل کی گئی کہ اس بات کی انکوائری کی جائے کہ وہ کون لوگ ہیں جو پانی بجلی گیس کے بغیر نادرن بائی پاس کے پوزیشن لیٹر جاری کررہے ہےں اور ورکرز سے پانچ ہزار سے پچیس ہزار وصول کررہے ہےں۔
اجلاس میں مطالبہ کیا گیا کہ گلشن معمار میں جو کوٹہ معذوروں اوربیواﺅںکا کوٹہ رکھاگیا تھا کہاں گیا اور کون لوگ دوکانوں کے ایڈوانس میں پیسے وصول کررہے ہےں کیا یہ سارے کام وزیرمحنت اور سیکریٹری بورڈ کے علم میں ہیں اگر ان کے علم میں نہیں ہیں تو یہ لوگ ان سے بھی طاقتور ہیں فورم کے اجلاس میں لیبراسٹینڈنگ کمیٹی کے ارکان جو مزدوروں کے نمائندے ہیںان کی خاموشی پر افسوس کیا گیا اور جو نمائندے بورڈ کی گورننگ باڈی میں ورکرز کی نمائندگی کررہے ہےں ان سے سوال کیا گیا کہ یہ ساری باتیں آپ کے علم میں لائی گئی ہیں اور وہ جو پرموشن ایجوکیشن سیکشن کی گئی ہیں وہ آپ کے نام پرکی گئی اس سارے معاملات سے ورکرزاجلاس میں لیبرڈیپارٹمنٹ اورسیسی کے حوالے سے بھی مشاورت کی سائٹ لیبرفورم کے اس اجلاس میں خائستہ رحمان،محمدریاض عباسی،اسرارخان،محمدسلیم،محمدریاض،گل اکبر،رﺅف ٹیکسٹائل کے نمائندے ظاہر شاہ ،عبدالرزاق،محمدوسیم،افتخاراعوان اور دیگر عہدیدوروں نے شرکت کی۔

7 Jan 2021 Ferado

مزدوروں کی امانتیں کرپٹ افسران کا روز محشر تک تعاقب کریں گیں

کراچی: لیبررائٹس کمیشن آف پاکستان (رجسٹرڈ) کے ترجمان نے کہا ہے کہ مزدور جوہمارے معاشرے کا سب سے زیادہ مظلوم طبقہ ہے اگر اس مظلوم طبقے کا وہ فنڈز جو ان کی حق وہلال کی کمائی سے حاصل کیا گیا فنڈز جو انہوں نے اپنا اور اپنے بچوں کا پیٹ کاٹ کر محکمہ محنت کے اداروں ای او بی آئی،ورکرزبورڈ،سیسی میں امانت کے طورپر جمع کرایا وہ فنڈز مزدوروں کی فلاح وبہبود کے بجائے کرپٹ افسرشاہی خود اپنے اور اپنے بچوں پر خرچ کررہی ہے۔

ترجمان نے کہا کہ انہیں شاید یہ معلوم نہیں کہ ان تینوں اداروں کے ایک کلرک سے لے کر اعلیٰ افسران تک جو مزدوروں کی امانت کے امین ہیں ان کی تنخواہیں ودیگرمراعات افسران سروس کے دوران ایک تو امانت میں خیانت کرتے رہتے ہیں ریٹائرمنٹ کے بعد لاکھوں روپے کی پنشن کے ساتھ ہرماہ لاکھوں روپے کے نزدیک تنخواہیںاپنی پنشن،میڈیکل سہولیات اس فنڈز سے ہی وصول کرتے رہےں یہ ناانصافی نہیں تو اور کیا ہے۔ترجمان نے کہا کہ ہم نے ان اداروں کے بیشتر افسران جنہوں نے ان اداروں کے فنڈز جو امانت کے طور پراداروں میں محفوظ ہوتے ہیں،خیانت کرنے پر ان کی اذیت ناک اموات دیکھی ہیں،انکے گھروں میںپریشانیاں،بربادیاں انکا مقدر بن چکی ہیں ،ان کی یہ بربادیاں مزدوروں کے فنڈز غبن کرنے کی وجہ سے ہوتی ہیں جب تک وہ مزدوروں کی امانت میں خیانت کرتے رہیں گے طرح طرح کے کرپشن کیسز ،ضمانتیں انکا پیچھا کرتی رہیں گیں آج یہ افسران کرپشن کیسز میں ملوث ہوکر جس طرح ذلت کی زندگی گزاررہے ہوتے ہےں یہ ایک مثال ہے۔
ترجمان نے کہا کہ یہ زندگی تومختصر ہے مگر جب روزہ محشر مزدوروں کے ہاتھ انکے گریبانوں میں ہونگے پھر انہیں اللہ کی گرفت سے نکالنے والاکوئی نہیں ہوگا اپنے خاندانوں کو حرام کی کمائی کھلانے والا تو ایک ہوتاہے مگربربادی پورے خاندان کی ہورہی ہوتی ہے اب مزدوروں نے اپنا معاملہ اللہ پرچھوڑدیاہے کہ وہی انصاف کریگا۔اور جب اللہ انصاف کرتاہے توامانت میں خیانت کرنے والوں کو جائے پناہ نہیں ملتی جس طرح کرپٹ افسران نیب،ہائیکورٹ کی لسٹ میں نام آنے سے خود زدہ ہیں وہ اپنے اعلیٰ افسران کو کہتے ہوئے سنے گئے ہیں کہ ہائیکورٹ کو دی جانے والی لسٹ میں انکے نام نہ ڈالے جائیں خواہ کتنا ہی پیسہ درکار کیوں نہ ہو۔

7 Jan 2021 Ferado

چیف جسٹس چیف سیکریٹری سے کرپٹ افسران کے بارے میں مکمل رپورٹ طلب کریں،ترجمان

کراچی: ٹرانسپرنسی لیبرپاکستان (رجسٹرڈ) کے ترجمان نے چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ کے تاریخی فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہائیکورٹ کے فیصلے کے مطابق سندھ کے500ایسے افسران کی لسٹ چیف سیکریٹری سندھ سے رواں ماہ جو طلب کی ہے چیف جسٹس چیف سیکریٹری کو بھی پابندکریں کہ وہ محکمہ محنت کے تمام ذیلی اداروں کے کرپٹ افسران کی بھی رپورٹ طلب کریں جہاں اعلیٰ عہدوں سمیت دیگر افسران کی بڑی تعداد قبل ازضمانت پر آج بھی ہیں تاکہ عدالت کو بھی علم ہوسکے کہ اداروں میں کتنی کتنی بڑی شخصیات مختلف کرمنل کیسز میں ملوث اور ضمانتوں پر ہیں۔

ترجمان نے کہا کہاگر کسی وجہ سے چیف سیکریٹری آئندہ سماعت میںافسران کے بارے میں کچھ نہ بتاسکے تو ہم چیف جسٹس کو تمام صورتحال سے آگاہ کریں گے اورہائیکورٹ کو محکمہ محنت کے کرتوت کا آئینہ دکھائیں گے کہ سپریم کورٹ اور ہائیکورٹ کے احکامات کی کس طرح دھجیاں اڑائی جارہی ہیں،یہی نہیں ان کیسز کے بھی بارے میں نشاندہی اور آگہی دیں گے کہ کن کن کیسز میں کون کون افسران ملوث ہےں۔

1 Jan 2021 Ferado

PIMS protesters to march towards Parliament today

Islamabad : The ongoing protest of the Federal Grand Health Alliance (FGHA) turned dramatic on Wednesday when an employee of the Accounts Department of the Pakistan Institute of Medical Sciences (PIMS) incised his wrist veins to protest against the Medical Teaching Institutions (MTI) Ordinance. Meanwhile, the PIMS protesters, who are on a strike for over a month now, will march up to the Parliament House today (Thursday) to pressurize the government to withdraw or revisit the said legislation.https://5723d893cfca831d3d318f42c3953ca2.safeframe.googlesyndication.com/safeframe/1-0-37/html/container.html The Chairman of FGHA. Dr. Asfandyar Khan announced intensification of the protest in view of the government’s “insensitivity” to their demand. “We will not surrender; the strike will continue till our demands are met. For now, we are utterly disappointed by the government’s lukewarm response,” he said.Meanwhile, the All-Pakistan Paramedics Association announced to withdraw services from all hospitals of Pakistan if MTI is not immediately withdrawn. Deputy General Secretary of Qaumi Watan Party (QWP) Ahmed Nawaz Jadoon also announced his party’s support for the struggle of PIMS employees.The Vice Chairman of FGHA Riaz Gujjar shared that 22 associations of federal employees, Auditor General and Accounts Union, healthcare workers from Punjab, Balochistan, KP, Kashmir, and Gilgit, lawyers, political figures, traders, Christian community, and numerous other organizations will join today’s march.Spokesperson of FGHA Dr. Hyder Abbasi said, it is sad that frontline workers are on protest for the last five weeks and the government is nowhere close to addressing their reservations. “Is this how you treat your heroes,” he questioned.Dr. Fazal-e-Rabi, the president of Young Doctors Association alleged, “MTI is not for reforms; it is an Ordinance that is being implemented to fulfill the desires of Dr. Nausherwan Barki and Advocate Ali Raza.” Many other protesters also spoke on the occasion.